Kabhi Aao | Sad Urdu Poetry | Hindi Poetry | Zia Anjum

A very sad and heart broken urdu poetry in the voice of Zia Anjum
www.facebook.com/Xia.Anjum

Audio Link:- https://soundcloud.com/zia-anjum/kabhi-aao

مرے ویران کمرے میں کبھی آؤ دکھاؤں میں
دراڑیں سانپ بن کر کیسے دیواروں سے لپٹی ہیں
کبھی آؤ دکھاؤں چیونٹیاں لمبی قطاروں میں
مری ہمسائیآں ہو کر مجھی سے لا تعلّق ہیں
کبھی آؤ دکھاؤں میں، ہوا ٹوٹی ہوئی کھڑکی سے اَ کر کس طرح، مجھ کو چڑاتی ہے
سحر ہوتے ہی کیسے روشنی آنکھوں میں چبھ کر، مجھ پہ طنزا مسکراتی ہے
کبھی آؤ دکھاؤں میں, مرے چاروں طرف بکھرے ہوئے سگریٹ کے ٹکڑے ہیں
کہ جیسے اک پرانی قبر پر رکھے ہوئے سوکھے ہوئے پتّے
کبھی آؤ دکھاؤں میں وہ الماری کہ جو چوپٹ کھلی ہے
اور میں اس میں ڈھونڈتا ہوں کچھ تو اکثر بھول جاتا ہوں، کہ میں کیا ڈھونڈتا ہوں
اور یہ ٹیڑھا آئینہ ٹوٹے ہوئے چہرے پہ کیسے چونک اٹھتا ہے
کبھی آؤ دکھاؤں میں
مرے ویران کمرے کے بہت گمنام کونے میں
تمہارے ہجر کے دن سے
یہ دل حیران کتنا ہے
تمھارے بعد یہ کمرہ مرا ویران کتنا ہے!

Leave a Reply

Urdu.io an Integrated Learning Ltd Website
%d bloggers like this: